Subscribe Us

Missing ANP leader - Dead - کوئٹہ میں لاپتہ اے این پی رہنما کی لاش ملی

Missing ANP leader - Dead -  کوئٹہ میں لاپتہ اے این پی رہنما کی لاش ملی

Missing ANP leader - Dead -  کوئٹہ میں لاپتہ اے این پی رہنما کی لاش ملی
Missing ANP leader - Dead -  کوئٹہ میں لاپتہ اے این پی رہنما کی لاش ملی

کوئٹہ: عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے لاپتہ رہنما اسد خان اچکزئی کی گولیوں سے چھلنی لاش ہفتہ کے روز شہر کے علاقے کلی نوسہر سے برآمد ہوئی۔


اسد خان 25 ستمبر 2020 کو اے این پی کے اجلاس میں شرکت کے لئے چمن سے کوئٹہ آتے ہوئے لاپتہ ہوگئے تھے۔


کوئٹہ پولیس کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل اظہر اکرم نے بتایا کہ اسد خان کے قتل کیس میں پولیس نے لیویز فورس کے ایک اہلکار کو گرفتار کیا تھا۔


اسرار احمد کو ہفتے کے روز سریاب روڈ کے علاقے سے گرفتار کیا گیا تھا۔ اسد خان کے قتل اور اس کی کار میں ڈکیتی کے پیچھے اس کا ہاتھ ہے۔ ڈی آئی جی نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ متوفی کی کار اس کے قبضے سے برآمد ہوئی ہے۔


انہوں نے بتایا کہ دوران تفتیش ملزم نے اسد خان سے کار چھین کر اسے قتل کرنے کا اعتراف کیا تھا۔


ڈی آئی جی نے بتایا ، "اسد خان نے لیویز فورس کے اہلکار کو لفٹ دی جس نے اسے کلی نوسہر سے 10 کلومیٹر دور ہلاک کردیا اور اس کی لاش کو گہری کھائی میں پھینک دیا۔"


پولیس کی ایک ٹیم نے مجسٹریٹ کے ہمراہ علاقے کا دورہ کیا ، نعش برآمد کرکے پوسٹ مارٹم کے لئے سول اسپتال منتقل کردی۔ پانچ ماہ پرانے جسم کو مسخ کردیا گیا۔


اے این پی کے جوائنٹ سکریٹری رشید خان نصر نے اسد خان کے قتل کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ: "اسد خان اب نہیں ہے اور اس کی لاش برآمد ہوئی ہے۔"


اسد خان اے این پی کے صوبائی صدر محمد اصغر اچکزئی کے کزن تھے ، جو بلوچستان اسمبلی میں پارٹی کے پارلیمانی لیڈر بھی ہیں۔


اے این پی گذشتہ سال اکتوبر سے اسد خان کی بازیابی کے لئے مظاہرے کررہی تھی۔


ادھر ، اے این پی کے صوبائی جنرل سکریٹری ببیٹ کاکا نے اسد خان کے اغواء اور قتل کے خلاف احتجاج میں اتوار کے روز کوئٹہ اور بلوچستان کے دیگر اضلاع میں شٹر ڈاؤن ہڑتال کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے یہ بھی اعلان کیا کہ پارٹی صوبے میں ایک ہفتہ بھر سوگ منائے گی اور پارٹی کے دفاتر پر اس کا پرچم آدھے گنبد پر اڑائے گا۔


Post a Comment

0 Comments